یہ 6 غلطیاں نہ کریں ورنہ اسکالرشپ کھبی نہیں ملے گا

اس تحریر میں وہ غلطیاں جو زیادہ تر سٹوڈنٹس کرتے ہے اپنے کیرئیر میں جو کہ بعد میں بہت نقصان دہ ثابت ہوتے ہے۔ اسلیئے آپسے گزارش ہے کہ یہ غلطیاں نہ کریں اور نیچے دیا گئے چند ضروری باتیں جو اسکالرشپس کرئیر میں اپکے بہت مدد گار ثابت ہوگی اس پر عمل ضرور کریں۔

1.Apply for international Summer Internships

یورپ اور شمالی امریکہ کی زیادہ تر اعلیٰ یونیورسٹیاں اور تحقیقی ادارے انڈر گریجویٹ اور ماسٹرز طلباء کو سمر انٹرنشپ انٹرنیشنل سٹوڈنٹس کو دیتے ہیں۔ زیادہ تر یہ انٹرنشپ آپ کے تمام اخراجات کو مکمل طور پر پورا کرتی ہیں۔ اس انٹرنشپ کے دوران، آپ کو ایک پروفیسر کی نگرانی میں ایک تحقیقی پروجیکٹ مکمل کرنا ہوتا ہے۔ یہ اپنی قابلیت کو ثابت کرنے، اپنے کو بڑھانے، ایکا معروف انسٹی ٹیوٹ میں تحقیق کرنے اور بین الاقوامی نمائش حاصل کرنے کا ایک بہترین موقع ہے۔

اس تحقیق سے اپکی سی وئی پر ایک مثبت اثر پڑیگا جو آپ کو اسکالرشپس حاصل کرنے ذور زندگی کے دوسروں شعبوں میں کامیاب بنا دیگا۔ اسلیئے زندگی میں یہ غلطی کبھی مت کرنا۔

2۔Apply for student exchange program

مختلف بین الاقوامی ادارے ایکسچینج پروگرام پیش کرتے ہیں جس میں آپ کو اس یونیورسٹی یا ادارے میں ایک سمسٹر پڑھنے اور گزارنے کا موقع ملتا ہے، جہاں آپ اپنی پسند کے مختلف انتخابی کورسز پڑھتے ہیں۔ آپ بین الاقوامی نمائش حاصل کرتے ہیں اور اپنی نرم مہارتوں کو بہتر بناتے ہیں۔

دنیا بھر میں ایسے بہت سے پروگرامز موجود ہے جو ایکسچینج پروگرام کرتے ہے۔ جس میں سب سے زیادہ مشہور دو پروگرامز درج زیل ہے۔

  1. Global UGRAD Program
  2. SUSI exchange program

3. Poster Presentation

نوجوان ریسرچرز کو چاہیے کہ وہ پاکستان کے اندر مقامی کانفرنسوں میں جو زیادہ تر پاکستانی یونیورسٹیوں میں ہوتے ہے ان میں اپنے خیالات اور ابتدائی ریسرچ نتائج پیش کریں۔ آپ کی تحقیق کا ہمیشہ جرنل پیپر کیلئے ہونا ضروری نہیں ہے۔ ایک پوسٹر کے ساتھ شروع کریں! آپ کو ابتدائی رائے اور ممکنہ تعاون کا موقع ملتا ہے۔جس سے آپکی ایکڈمک میں کافی بہتری آسکتی ہے۔ اور یہی چیز آپ کو اسکالرشپس میں مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔

4. Research Collaborations.

یہ واقعی اہم ہے۔ اپنی یونیورسٹی میں ایک ممکنہ سپروائزر کی تلاش کیوں کی جائے جب وہاں لاکھوں پروفیسرز موجود ہوں؟ اپنی ڈگری کے اول میں پروفیسرز تک پہنچیں، جس کا طریقہ کار میں نے پہلے پوسٹ میں دیا ہے کہ کیسے اپ پروفیسر تک پھنچ سکتے ہے۔انہیں ای میل کریں، اپنی دلچسپیوں پر تبادلہ خیال کریں، ممکنہ تعاون تلاش کریں۔ پوچھیں کہ کیا وہ آپ کی مشترکہ نگرانی کر سکتے ہیں، یا شاید کسی تحقیقی منصوبے میں آپ کے ساتھ تعاون کر سکتے ہیں۔ پھر اپنے مقامی سپروائزر سے بات کریں اور وہ خوشی سے تعاون کے لیے راضی ہو جائیں گے۔

دوسرا بہترین حصہ یہ ہے کہ اب آپ کو ٹریول گرانٹس کے بارے میں فکر کرنے کی ضرورت نہیں ہے، غیر ملکی پروفیسر آپ کے لیے ایسا کریں گے۔ اور پہلی بہترین بات یہ ہے کہ آپ کو اس کا نام اپنے مقالے پر، اپنے تحقیقی مضمون پر اور اپنے پر مل جائے گا۔ آپ کو ان کی سفارشات ملتی ہیں اور آپ ان کے ساتھ پی ایچ ڈی بھی شروع کر سکتے ہیں اگر آپ پاکستان میں اپنی ڈگری کے دورانیئے واقعی ان کو متاثر کرتے ہیں۔

5۔ Summer School.

بہت ساری بین الاقوامی کانفرنسیں یا مخصوص ریسرچ گروپ کمیونٹیز مکمل طور پر فنڈڈ سمر اسکول پیش کرتے ہیں جن میں ان کی توجہ طلباء کی سرپرستی پر ہوتی ہے۔ انہیں ایک نقطہ نظر دیں کہ ان کے علاقے میں کس قسم کی تحقیق ہو رہی ہے، وہ تھیسس کا موضوع کیسے تلاش کر سکتے ہیں، وہ ریسرچ نیٹ ورک کیسے بنا سکتے ہیں اور اس سے بھی اہم بات یہ ہے کہ آپ اپنی سافٹ سکیل کو کیسے بہتر بنا سکتے ہیں۔

6. Volunteer Conference

رضاکارانہ خدمات کے فوائد یہ ہیں کہ آپ کو جزوی طور پر فنڈنگ ​​ملتی ہے، آپ کو ذاتی طور پر اپنے پسندیدہ محققین سے ملنے اور ان کا استقبال کرنے کا موقع ملتا ہے۔ آپ پوری ریسرچ کانفرنس میں شرکت کریں گے اور اپنی تحقیق کے لیے نئے آئیڈیاز اور ہدایات حاصل کریں گے۔ آپ کو نئے ممکنہ تعاون بھی ملیں گے۔

یہ چند باتیں جو اپنے ابھی پڑھیں اس پر عمل کریں۔ اسکالرشپس جے ساتھ ساتھ یہ آپ کو تعلیمی میدان میں اور اس کے ساتھ ساتھ آپ کو اگے بڑھنے میں بہت مدد گار ثابت ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں