عبد العزیز یونیورسٹی اف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اسکالرشپ کی تفصیلات

اگر آپ ماسٹرز سٹڈیز کے ساتھ کروڑوں میں کمانا بھی چاہتی ہو وہ بھی صرف دو سالوں میں تو اپ سعودی عرب کی کنگ عبد العزیز یونیورسٹی اف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کی اسکالرشپ پر اپلائی کریں۔

یہ یونیورسٹی ماسٹرز اور پی ایچ ڈی کیلئے ایک فنڈڈ اسکالرشپ دیتے ہے جو کہ اپ کی تمام اخراجات کو پورا کردیتی ہے۔ اس اسکالرشپ میں اپکو ایک روپیہ بھی دینا نہیں پڑھتا۔اس اسکالرشپ کے تحت ٹیوشن فیس معاف کیا جاتا ہے۔ جس میں فیس، ماہانہ وظیفہ (سالانہ $20,000-30,000 کے درمیان، قابلیت کے لحاظ سے اور ڈگری پروگراموں کے ذریعے اپکی گریڈ پر )، رہائش، میڈیکل کے ساتھ ساتھ یونیورسٹی میں سبسڈی والا کھانا کیفے ٹیریا اور واپسی کا ٹکٹ بھی دیا جاتا ہے۔

اس اسکالرشپ پر آپلائی کرنے کیلئے اپکو IELTS سرٹیفیکیٹ لازمی دینا ہوگا تاہم GRE کی ضرورت نہیں ہوتی۔ ۔ لیکن اگر اپکے پاس ہو تو پھر اپکی اسکالرشپ ملنے چانس آورو سے زیادہ ہوجاتی ہے۔

اپلائی کرنے کے بعد اسکالرشپ کی ایک جائزہ کمیٹی یقینی بنائے گی کہ آپ کی درخواست مکمل ہے اور یہ آپ کے منتخب کردہ پروگرام (جس کیلئے اپنے اپلائی کیا ہے ) ان کے لیے موزوں ہے۔ درخواست کی جانچ پڑتال کے بعد آپ کی درخواست کے فیکلٹی آپ کو انٹرویو کیلئے مدعو کیا جا سکتا ہے۔ اور اس میں پھر اپکی سلیکشن ریجکشن کا فیصلہ کرتی ہے۔

ایک بات زہن میں نوٹ کرلیں کہ انٹرویو درخواست کے عمل کا ایک لازمی حصہ ہے اور اس کیلئے اپنے بالکل تیار ہوکے جانا ہے۔ انٹرویو میں صرف یہ دیکھا جاتا ہے کہ آیا اپ اس پروگرام کیلئے ایک موزوں امیدوار ہے یا نہیں؟۔

اپکے زہن میں سوال ہوگا کہ انٹرویو کون لیگا؟ اور کہاں پر دینا ہوگا۔ تو اس کا جواب یہ ہے کہ انٹرویو اپسے مطلوبہ یونیورسٹی کے مینجمنٹ ٹیم یا فیکلٹی لی گی وہ بھی آپ کے ملک کے لحاظ سے ویڈیو چیٹ کے ذریعے انٹرویو لیگی یا ذاتی طور پر۔انٹرویو ہونے کے بعد تمام درخواست گزار کو ای میل کے ذریعے ان کے فیصلے سے آگاہ کیا جائے گا۔ کہ ایا اپ اسکالرشپ حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے ہو یا نہیں۔

اسکالر شپ پر درخواست دینے کا طریقہ

STEP: 1

سب سے پہلے اپنے گوگل میں KAUST یونیورسٹی کا نام سرچ کرنا ہے۔ اس کے بعد اپ انکی آفیشل ویب سائٹ اوپن کریں۔

STEP 2:

اور اس کے بعد اپ ایڈمیشن کی جگہ پر جاکر یونیورسٹی پر اپلائی کرنا ہوگا۔ اپکے زہن میں ہوگا کہ یہ مشکل ہے وغیرہ وغیرہ! تو آپ بہانہ بنا رہے ہو کیونکہ اپ ہی کی طرح سٹوڈنٹس اس کو حاصل کرتے ہے۔ اور اپلائی تو ویسے بھی فری ہے پھر اپ کرتے کیوں نہیں ؟

اپنا تبصرہ بھیجیں